Wishes

Wishes

M. Shahid Alam — Mudlark — 2017

ہزاروں خواہشیں ایسی کے ہر خواہش پہ دم نکلے
بہت نکلےمرے ارمان لیکن پھر بھی کم نکلے

One life, a thousand wishes;
For each we die slowly.
Many cups fill to the brim,
Many more lie empty.

Khizer

Khizer

M. Shahid Alam — Mudlark — 2017

وہ زندہ ہم ہیں کہ ہیں رو شناسِ خلق اے خضر
نہ تم کہ چور بنے عمرِ جاوداں کے لیے

We dare to live, O Khizer,
Cheek by jowl with men;
You chose to live for ever
By taking leave of life.

Sorrows

Sorrows

M. Shahid Alam – Mudlark – 2017

غم نہیں ہوتا ہے آزادوں کو بیش از یک نفس
برق سے کرتے ہیں روشن شمع ماتم خانہ کو

Sorrows do not lodge
In the hearts of free men.
They brighten bleak nights
With shafts of lightning.

Love

Love

M. Shahid Alam — 1968

عشق پر زور نہیں ہے یہ وہ آتش غالب
کہ لگاے نہ بنے اور بجھاے نہ بنے

Love does not bend to your will.
It is a blaze which if you will
You cannot light: and once lighted,
You cannot put out, do what you will.